منطق

بِسْمِ اللّٰهِ الرَّحْمٰنِ الرَّحِيْمِ * لا الہٰ الا اللہ محمّد رسول اللہ * قُلْ هُوَ اللّـٰهُ اَحَدٌ - اَللَّـهُ الصَّمَدُ - لَمْ يَلِدْ وَلَمْ يُوْلَدْ - وَلَمْ يَكُنْ لَّـهٝ كُفُوًا اَحَدٌ

2017-05-23 07:50:39    72 Views قرآن حکیم کی شان اعجاز  /  محمد اسحاق قریشی

قرآن حکیم کی شان اعجاز

ولید بن مغیرہ قرآن اور صاحب قرآن کا بہت بڑا دشمن تھا۔اس کی قادر الکلامی کی دھوم پورے مکہ میں تھی۔ابوجہل چاہتا تھا کہ اس کی زبان سے قرآن حکیم کے خلاف کچھ کلمات نکلوائے۔ولید بن مغیرہ اسلام کا دشمن تو تھا مگر قرآن کی عظمت نے اسے سرنگوں کر رکھا تھا۔ابوجہل کے اصرار پر اس نے کہا کہ تم جانتے ہو کہ میں تمام اصناف سخن کا تم سے زیادہ شناسا ہوں۔لیکن خدا کی قسم محمد ﷺ کا کلام اصناف سخن میں کسی سے بھی تعلق نہیں رکھتا۔اس موقعہ پر ولید بن مغیرہ نے یہ تاریخی جملے کہے:۔
وَاللّٰہِ اِنَّ لِقَولِہٖ لَحَلَاوَۃََ وَاِنَّ عَلَیہِ لَطَلَاوَۃََ وَاِنَّہُ لَمُنِیرُُ اَعلَاہُ مُشرِقُُ اَسٗفَلُہُ وَاِنَّہُ لَیَعلُوٗ وَمَا یُعلٰی وَاِنَّہُ لَیَحطِمُ مَا تَحتَہُ0
"خدا کی قسم اس کلام میں ایک عجیب قسم کی مٹھاس ہے۔حسن وجمال اس پر سایہ کناں ہے۔اس کا اوپر والا حصہ ضیاء بار اور نیچے والا حصہ تجلی ریز ہے۔یہ غالب آتا ہے مغلوب نہیں ہو سکتا۔جو اس کے نیچے آتا ہے یہ اسے پیس کر رکھ دیتا ہے"
 

جگہ براۓ اشتہار

جگہ براۓ اشتہار